Imran khan ahsas program

وزیراعظم نے پاکستان کے سب سے بڑے گریجوایٹ پروگرام کا آغاز کر دیا

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے احساس پروگرام کے تحت پاکستان کی تاریخ کے سب بڑے انڈر گریجوایٹ پروگرام کا آغاز کر دیا ہے۔اس پروگرام کے تحت حکومت 4سالوں میں 2سالاکھ طالب علموں کو 50ہزار کی شرح سے سکالر شپ دے گی۔

وزیراعظم عمران نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ غربت کو کم کرنے کا سب سے بہترین موقع ہے آپ غریب گھرانے کے بچوں کو تعلیم حاصل کرنے کے مواقع مہیا کیے جائیں۔ معاشرے میں کس قدر نا انصافی تھی تین سسٹم چل رہے تھے۔ دنیا کا کوئی معاشرہ اپنے بچوں کے ساتھ اس طرح ظلم نہیں کرتا ہے۔

وزیراعظم ک کہنا تھا کہ بدقسمتی سے دینی مدارس کے طلباء کیلئے کسی نے کوشش نہیں کی، ہر سال50ہزار سکالر شپ پروگرام بہترین کام ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ریاست مدینہ کی سوچ ہے۔ احساس پروگرام کی چیئرمین سے ان کا کہنا تھا کہ نمل یونیورسٹی کا ہی طریقہ یہاں اپنایا جائے گا کہ اگر کوئی ٹیسٹ میں پاس ہو جاتا ہے اور اس کے والدین فیس ادا نہیں کر سکتے تو ایسے بچوں کو موقع دیں گے

یہ بھی پڑھیں:  اسرائیل کے معاملے پرہماری پوزیشن میں کوئی تبدیلی نہیں آئی:وزیراطلاعات

سرکاری اداروں میں میرٹ پر پورا اترنے کے بعد اگر کسی طالب علم کو معاشی مشکلات ہیں تو وہ اس سکالر شپ پروگرام سے مستفید ہو سکتا ہے۔ اس پروگرام سے فائدہ اٹھانے کیلئے 45ہزار سے کم آمدنی ہونا ضروری ہےجن طالب علموں کے والدین کی آمدنی 45ہزار سے کم ہے وہ اس پروگرام سے سکالر شپ لے سکتے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملک کا چھوٹا سا طبقہ جو سارے وسائل پر قابض ہو جاتا ہے۔اس کی نسبت ہم ایک پروگرام لے کر آئے ہیلتھ انشورنس پروگرام لے کر آئے۔ ان کا کہنا تھا کہ جو ہم نے لنگر کھولنے کا فیصلہ کیا آپ دیکھیں ملکوں پر مشکل وقت آتے ہیں یورپ میں جب مشکل وقت آتا ہے وہ سوپ کارنر کھول دے دیتے ہیں۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم راشن پروگرام شروع کرنے والے ہیں۔ ہم آٹا ، گھی ، چینی ضروریات کے استعمال کی چیزیں لوگوں کو دیں گے۔ دیر اس لیے لگ رہی ہے کہ ہم ڈیٹا اکٹھا کررہے ہیں تاکہ صحیح مستحق لوگ مستفید ہو سکیں۔

یہ بھی پڑھیں:  اپوزیشن ووٹ آف کانفیڈنس میں شرکت نہیں کرے گی:مولانا فضل الرحمن

اپنا تبصرہ بھیجیں