molana-fazlu-rehman-dehrna

کیا مولانا فضل الرحمن اکیلے رہ گئے ہیں ؟

EjazNews

ڈی جی آئی ایس پی آرنے گزشتہ روز مولانا فضل الرحمان کی تقریر کے بعد اے آر وائے نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر مولانا فضل الرحمن کے تحفظات ہیں تو وہ اپنے تحفظات متعلقہ اداروں کے پاس لے کر جائیں، سڑکوں پر آکر الزام تراشی سے مسائل حل نہیں ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ ہماری سپورٹ ایک جمہوری منتخب حکومت کے ساتھ ہے، کسی ایک جماعت کیلئے نہیں، اگر الیکشن کی شفافیت سے متعلق شکایت ہے تو تحفظات متعلقہ ادارے کے پاس لے کر جائیں۔
ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ فوج ایک قومی اور غیرجانبدار ادارہ ہے، حکومت کے ساتھ آئین اور قانون کے دائرہ میں رہ کر سپورٹ کررہے ہیں، آگے کیا صورت حال بنتی ہے، اس میں بھی قانون اور آئین کے تناظر میں جو بھی فیصلہ حکومت کرے گی، قانون کے مطابق اس پر کارروائی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ ملکی استحکام کو کسی بھی صورت نقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔
اب مولانا فضل الرحمن کا بیان بھی سامنے آیا ہے ۔ اردو نیوز کے مطابق مولانا فضل الرحمن کا کہنا ہے کہ یہ ان کی سمجھ سے بالا تر ہے کہ فوج کے ترجمان نے ایسا بیان کیوں دیا۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایس پی آر کے بیان سے واضح ہو گیا کہ میں کس ادارے کی بات کر رہا ہوں۔
مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ 2018 کے انتخابات کو صرف ان کی جماعت نے نہیں بلکہ ساری اپوزیشن نے غیر شفاف قرار دیا تھا اور اس دھاندلی کے نتیجے میں بننے والی حکومت کو فی الفور مستعفی ہو جانا چاہیے۔
مولانا فضل الرحمن کے دھرنے میں اپوزیشن کے شرکاءواپس جا چکے ہیں اور انہوں نے مولانا سے کسی قسم کے دھرنے میں ساتھ دینے کی بات نہیں کی ہے ۔ ایسا دعویٰ ڈاﺅن نیوز کر رہا ہے۔ ڈاﺅن نیوز پر جاری ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق اپوزیشن جماعتوں نے واضح کیا ہے کہ انہوں نے اعلان کر رکھا تھا کہ وہ اسلام آباد میں صرف اور صرف جلسہ کر یں گے۔ انہوں نے اپنے کارکنوں کو بھی اس بات پر واضح کر دیا تھا کہ وہ صرف جلسے میںشریک ہوں گے انہوں نے اپنے کارکنوں کو دھرنے کیلئے نہیں بلایا تھا۔
مولانا فضل الرحمن نے حکومت کو دو دن کی مہلت دی تھی کہ وزیراعظم استعفیٰ دے دیں ۔ اس کے ساتھ انہوں نے (دھمکی ہی کہا جائے گا) کہ یہ لوگ جو میرے ساتھ ہیں اس پر قدرت رکھتے ہیں کہ وہ وزیراعظم کو گھر سے نکال کر استعفیٰ لے لیں۔
اب آگے کی صورتحال کیا ہوتی ہے حالات کا اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ہے دیکھتے ہیں کیونکہ اپوزیشن جماعتوں کے کارکن واپس جا رہے ہیں۔ اب مولانا فضل الرحمن اکیلے دھرنا دیں گے یا ان کا اگلا پلان کیا ہوگا ابھی انہوں نے سب کچھ واضح نہیں کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  مودی اب کسی غلط فہمی میں نہ رہنا ورنہ یہ تمہاری آخری غلطی ہوگی:وزیراعظم عمران خان

اپنا تبصرہ بھیجیں