ہم سب ملک کر اس سلیکٹڈ حکومت کو گھر بھیجیں گے:بلاول بھٹو زرداری

EjazNews

بلاول بھٹو زرداری نے آزادی مارچ سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اقتدار میں سازشوںکی وجہ سے آئے ہیں کسی اور کے اشارے کی وجہ سےآئے ہیں سلیکٹڈکی وجہ سے آئے ہیں۔وہ سلیکٹڈ کو خوش رکھتے رہیں گے۔ آپ نے دیکھا کہ ایک سال میں معاشی دہشت گردی نے ہمارے طبقے کا کس طرح سے قتل کر دیا وہی عمران جو وعدہ کرتا تھا ایک دو نہیں ایک پاکستان بنے گا اور اسی عمران خان کا کی معاشی پالیسی ہے کہ عوام کو تکلیف پہنچاتا ہے اور امیروں کو ریلیف پہنچاتا ہے۔امیروں کیلئے ارب پتی بینکرز کیلئے اور ارب پتی سٹاک بروکر کیلئے بیل آئوٹ ہوتا ہے۔ امیرو ں کیلئے ٹیکس ایمنسٹی سکیم ہوتا ہے۔غریب آدمی کیلئے سفید پوش طبقے کے لیےکوئی ٹیکس ایمنسٹی سکیم نہیں ہوتا۔ عوام کیلئے مہنگائی کی سونامی ہے۔ عوام کیلئے کوئی ریلیف نہیں ہوتا کیونکہ ہمارا وزیراعظم سلیکٹڈ ہے ہمارا وزیراعظم عوام کا نمائندہ نہیں ہے۔ہمارا وزیراعظم نالائق ہے ،نااہل ہے ، کٹھ پتلی ہے۔ اگر سلیکٹڈ وزیراعظم ہوگاتو ہماری فارن پالیسی پر بھی اثر ہوگا۔ آپ سب نے دیکھا کہ عمران خان کے ہوتے ہوئے اس کٹھ پتلی وزیراعظم کے دور میں تاریخ پر کشمیری پر تاریخی حملہ ہو رہا ہے ۔اور ہمارا وزیراعظم نیشنل اسمبلی میں اٹھ کر کہتا ہے کہ میں کیا کروں ، ہمارا وزیراعظم کشمیر کیلئے صرف تقریریں کرتا ہے اور ٹویٹ کرتا ہے ۔ پاکستان کے عوام کو پتہ ہے کہ اس نے کشمیر پر سودا کر لیا ہے اور کشمیر پر سودا نا منظور ہے۔ اور ہر پاکستانی آخری دم تک لڑتا رہے گا اور اس سودے کو قبول نہیں کرے گا۔
اب پورے ملک کا ایک ہی پیغام ہے ہر سیاسی جماعت کا ایک ہی پیغام ہے ۔ پاکستان پیپلز پارٹی کا نعرہ ہے گو سلیکٹڈ گو، ن لیگ کا نعرہ ہے گو سلیکٹڈ گو، جے یو آئی کا نعرہ ہے گو سلیکٹڈ گو۔ مولانا فضل الرحمن کا نعرہ ہے گو سلیکٹڈ گو۔ عوامی نیشنل پارٹی کا نعرہ ہے اسفند یار ولی کا نعرہ ہے گو سلیکٹڈ گو۔طلباء کا نعرہ ، طلباء کا نعرہ ، کسانوں کا نعرہ ہم سب کا نعرہ ہے پاکستان کا نعرہ ہے گو سلیکٹڈ ، گو سلیکٹڈ گو ۔ میں آپ سب کو اور مولانا فضل الرحمن کو یہ یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ہر جمہوری قدم میں ہم آپ کے ساتھ ہوں گے۔ہم سب ملک کر اس سلیکٹڈ حکومت کو گھر بھیجیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  انڈین عوام کی اس مصیبت کے وقت میں مدد کرنا چاہتے ہیں: فیصل ایدھی

اپنا تبصرہ بھیجیں