hartal

آخر تاجر برادری حکومت سے اپنے مطالبات منوانے میں کامیاب ہو گئی

EjazNews

تاجر برادری نے29اور30اکتوبر کو مشترکہ طور پر ملک بھر میں ہڑتال کی ہوئی تھی ۔یہ ہڑتال حکومتی اقدامات کیخلاف تھی۔ اس ہڑتال کے مثبت نتائج سامنے آئے ۔ حکومت اور تاجرو ں کے درمیان معاہدہ طے پاگیا۔ کچھ حکومت نے اپنی منوائی کچھ تاجر برادری کی مانی گئیں۔ یہ ایک مثبت پیش رفت ہے ۔کاروبار اور اس کاروبار سے کمائے جانے والے پیسوں سے آنا ملک ٹیکس دونوں ہی ملک کیلئے ضروری ہیں۔ حکومت نے اپنی شناختی کارڈ سے خریداری کی شرط برقرار رکھی ہے اور اسے تین ماہ کیلئے موخر کر دیا ہے۔

ٹھیلہ لگانے والوں نے بھی اس ہڑتال میں شرکت کی

اس معاہدے میں مشیر خزانہ حفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ 10کروڑ سالانہ سیلز والوں کو ود ہولڈنگ ایجنٹ نہیں بنایا جائے گا اور10کروڑ سالانہ سیل پر ٹرن اوور ٹیکس کی شرح کو1فیصد سے کم کر کے 0.5فیصد کر دیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ تاجروں کے مسائل پرڈیسک بنایا ج ائے گا اور نئی رجسٹریشن ہوگی۔ان کا کہنا تھا ملک میں40لاکھ کے قریب ٹریڈرز ہیں جبکہ ٹیکس صرف 3لاکھ 93ہزار ادا کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  دہشتگردوں کی کوئی سرحد نہیں ہوتی، وہ پوری دنیا کے امن کونقصان پہنچا رہے ہیں: وزیراعظم
تاجر برادری نے اس دفعہ مکمل طورپر ہڑتال کا مظاہرہ کیا

اپنا تبصرہ بھیجیں