sarfraz ahme-pcb

سرفراز احمد کو کپتانی سے ہٹا دیا گیا

EjazNews

گزشتہ سال ہونے والی ٹی ٹونٹی کے سحر میں سرفرا ز ایسے مبتلا ہوئے تھے کہ اس کے بعد انہوں نے جیت کا منہ ہی نہ دیکھا۔ آسٹریلیا کیخلاف کھیلتے ہوئے یہ کہا گیا کہ ٹیم بہت تھکی ہوئی تھی ٹی ٹونٹی میچوں کی وجہ سے ۔وہاں کلین سویپ برداشت ہو گئی۔ اس کے بعد ورلڈ کپ اور انگلینڈ کے ساتھ ہونے والے میچوں میں ٹیم کی کارکردگی اس قدر مایوس کن تھی کہ شائقین کرکٹ مایوس ہوئے بغیر نہ رہ سکے۔ اس کے بعد آسٹریلیا کی ٹیم پاکستان میں آئی ۔ امید کی جارہی تھی پاکستانی ٹیم اس ٹیم سے میچ جیت جائے گی لیکن دیکھئے ٹیم نے اپنا ڈھٹائی نہ چھوڑی اور ان سے بھی کلین سویپ سوئے اور پوری سیریز ہارے اور ہر ایک کی توقع ان کے بارے میں غلط ہی نکلی ۔ اچھی کارکردگی نہ دکھانے والی ٹیم کو ہی فارغ کر دینا چاہئے اور کوئی ایسا لائحہ عمل ضرور ہونا چاہئے کہ قومی ٹیموں ایک سے زائد ہوں جو ٹیم کارکردگی نہیں دکھا رہی وہ گھر میں آرام سے بیٹھے ان کی جگہ دوسری ٹیم کو دے دی جائے۔
اب پاکستانی ٹیم دورئہ آسٹریلیا پر جارہی ہے اس میں سرفراز احمدٹیسٹ اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کے لیے کپتان نہیں ہوں گے۔ اظہر علی آسٹریلیا کے خلاف 2 ٹیسٹ میچز میں قومی ٹیسٹ ٹیم کی قیادت کریں گے اور 3 ٹی ٹونٹی میچز میں بابر اعظم قومی ٹیم کی کمان سنبھالیں گے۔پاکستان کرکٹ ٹیم 21نومبر سے 3 دسمبر تک آسٹریلیا کے خلاف 2 ٹیسٹ میچز کھیلے گی۔اسی طرح پاکستان کے آسٹریلیا کے خلاف 3 ٹی ٹونٹی میچز کی سیریز بھی شیڈول ہے جو 3 سے 8 نومبر تک کھیلی جائے گی۔
پی سی بی کےجاری کردہ اعلامیے میں یہ بھی بتایا گیا کہ 20-2019 میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ میچز میں اظہر علی ہی پاکستانی ٹیم کی نمائندگی کریں گے جبکہ آئندہ سال 2020 میں آئی سی سی ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں بابر اعظم قومی ٹی ٹونٹی ٹیم کے کپتان ہوں گے۔بیان کے مطابق گزشتہ کچھ سیزیر میں مجموعی طور پر سرفراز احمد کی ناقص کارکردگی کی بنیاد پر انہیں کپتانی سے ہٹایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:  نوازشریف کی فوج مخالف تقریر ہندوستان کے اخباروں کی ہیڈلائنز بنی ہیں:وفاقی وزیر

اپنا تبصرہ بھیجیں