altaf hussan

لندن میں الطاف حسین پرسخت پابندیاں عائد

EjazNews

الطاف حسین لندن کے پولیس سٹیشن میں پیش ہوئے جہاں انہوں نے تیسری بار بھی لندن پولیس کے سوالوں کے جوابات نہیں دئیے جس پر انہیں حراست میں لے لیا گیا۔سکاٹ لینڈ یارڈ نے بانی ایم کیو ایم پر انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت فرد جرم بھی عائد کی۔
جیو نیوز کے مطابق بانی ایم اکیو ایم کو حراست میں لیے جانے کے بعد ویسٹ منسٹر مجسٹریٹس کورٹ پہنچایا گیا جہاں جج نے ان کی ضمانت تو منظور کر لی تاہم ان پر سوشل میڈیا سمیت کسی بھی میڈیا فورم کے استعمال کر نے پرپابندی عائد کر دی گئی۔ویسٹ منسٹر مجسٹریٹس کے کورٹ نمبر ون میں سماعت کے دوران جج نے بانی ایم کیو ایم کو برطانیہ، پاکستان سمیت کسی بھی جگہ تقاریر نہ کرنے کا حکم دیا جبکہ الطاف حسین پر بغیر اجازت سفر کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی۔ویسٹ منسٹر مجسٹریٹس کورٹ کی موجودہ چیف مجسٹریٹ سینئر ڈسٹرکٹ جج ایما آربوتھ ناٹ نے بانی ایم کیو ایم کو پاکستان کی سیاسی صورتحال پر بھی بات کرنے سے روک دیا۔

یہ بھی پڑھیں:  جیت گئے دل کی دھڑکنیں تیز کروا کر

پاکستان کی جانب سے جج کے سامنے کیس کراؤن پراسکیوشن سروس کے وکیل نے پیش کیا۔ بانی متحدہ نے جج کے سامنے اپنے نام، تاریخ پیدائش اور ایڈریس کی تصدیق کی، جج نے بانی متحدہ سے پوچھا کہ کیا انہیں معلوم ہے کہ ان پر دہشت گردی کے الزامات میں فرد جرم عائد کی گئی ہے؟ جج نے الزامات کی تفصیل بانی متحدہ کو پڑھ کر سنائی۔ بانی متحدہ الطاف حسین نے جج کے سامنے خود پر عائد الزامات کو قبول کرنے سے انکار کردیا۔
کیس کی اگلی سماعت سینٹرل کریمنل کورٹ میں یکم نومبر کو ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں