covid_19

پوری دنیا کے لمحہ فکریہ ،چین میں کرونا وائرس کی نئی لہر

EjazNews

چین میں کرونا وائرس کے ایک دن میں 61 نئے کیسز ریکارڈ ہوئے جس کے بعد ایک مرتبہ پھر خوف کی لہر دوڑ گئی ہے۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق چین میں کرونا وائرس کے 61 نئے کیسز سامنے آئے ہیں جو اپریل کے بعد سے ایک دن میں ریکارڈ ہونے والے سب سے زیادہ کیسز ہیں۔ 14 اپریل کو 89 کیسز ریکارڈ کیے گئے تھے جن میں سے بیشتر وہ مریض تھے جو بیرون ممالک سے چین واپس آئے تھے۔ دوسری جانب امریکہ کی جنوبی اور مغربی ریاستوں میں کرونا متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔
چین کے نیشنل ہیلتھ کمیشن کے مطابق ملک کے شمال مغربی صوبے سنکیانگ میں کرونا کے مقامی نوعیت کے 57 کیسز ریکارڈ کیے گئے ہیں۔ جولائی کے وسط میں صوبہ سنکیانگ کے دارالحکومت ارومچی میں اچانک کرونا وائرس کے مریضوں میں اضافہ ہونا شروع ہو گیا تھا۔
چین کے شمال مشرقی صوبے لیاو¿ننگ میں وائرس کے 14 کیسز سامنے آئے تھے۔ اس کے علاوہ جنوبی کوریا کی سرحد کے پاس واقع چین کے صوبہ جلن میں بھی کرونا کے دو مریض سامنے آئے۔ صوبہ جلن میں مئی کے بعد پہلی مرتبہ کرونا کا کوئی کیس سامنے آیا ہے۔پیر کو سامنے آنے والے کرونا کے کیسز میں چار ایسے مریض تھے جو بیرون ملک سے واپس چین آئے تھے۔
چینی حکام نے صوبہ لیاو¿ننگ کے شہر ڈالیان میں ہزاروں افراد کے کرونا کے ٹیسٹ کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔ ٹیسٹ کی دوسری لہر کا آغاز صوبہ سنکیانگ کے شہر ارومچی میں بھی کر دیا گیا ہے۔ 35 لاکھ کی آبادی کے شہر ارومچی میں بیس لاکھ سے زیادہ افراد کے ٹیسٹ ہو چکے ہیں۔
وائرس پر قابو پانے کی غرض سے ارومچی اور ڈالیان شہر میں لاک ڈاو¿ن کا نفاذ کر دیا گیا ہے جس کے بعد جنگی بنیادوں پر اس وبا سے نمٹا جا رہا ہے۔ماہرین کو فی الوقت سنکیانگ میں حالیہ وائرس کے پھیلنے کی وجہ معلوم نہیں جس سے اب تک 178 افراد متاثر ہو چکے ہیں۔
دوسری جانب جان ہاپکنز یونیورسٹی کے اعداد و شمار کے مطابق امریکہ میں گذشتہ24 گھنٹوں میں وائرس کے 55 ہزار 187 نئے مریض سامنے آئے ہیں۔ کرونا سے شدید متاثر ہونے والے ملک امریکہ میں اب تک 42 لاکھ سے زیادہ افراد وبا کا شکار ہو چکے ہیں، جبکہ ایک لاکھ 46 ہزار سے زیادہ اموات واقع ہوئی ہیں۔
امریکہ میں متاثرین کی تعداد کم ہونے کے بعد یک دم کیسز میں اضافہ ہوا ہے بالخصوص جنوبی اور مغربی ریاستوں کیلی فورنیا، ٹیکساس، ایلابامہ اور فلوریڈا میں۔

یہ بھی پڑھیں:  مقبوضہ کشمیر میں لگی آگ کب ٹھنڈی ہوگی