unitednations

انڈیا سمیت متعدد ممالک سلامتی کونسل کے غیر مستقل رکن منتخب

EjazNews

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے انڈیا سمیت میکسیکو، آئرلینڈ اور ناروے کو2020-21 کے لیے سلامتی کونسل کا غیر مستقل رکن منتخب کر لیا ہے۔منتخب ہونے والے ممالک کو جیت کے لیے کاسٹ کیے گئے ووٹس میں سے دوتہائی اکثریت درکار تھی۔
سلامتی کونسل میں غیر مستقل ممبران کی تعداد 10 ہے جبکہ امریکہ، چین، برطانیہ، روس اور فرانس کا شمار مستقل ارکان میں ہوتا ہے جن کے پاس ویٹو پاور ہے۔
ناروے نے 130 اور آئرلینڈ نے 128 ووٹ لے کر سلامتی کونسل کی رکنیت حاصل کی ہے۔
کینیڈا مغربی ممالک کی سیٹ حاصل کرنے کے لیے کافی دیر سے کوشش میں تھا لیکن اسے ناروے اور آئرلینڈ کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے جو کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کے لیے ایک دھچکے سے کم نہیں ہے۔
افریقی ممالک اس مرتبہ ایک مشترکہ ممبر منتخب کرنے میں ناکام رہے ہیں اور افریقی سیٹ کے لیے دوبارہ ووٹنگ ہوگی کیونکہ جبوتی اور کینیا دو تہائی اکثریت حاصل کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ کینیا کو 113جبکہ جبوتی کو 78 ووٹ ملے ہیں۔میکسیکو بھی بلامقابلہ سلامتی کے غیر مستقل رکن کے طور پر منتخب ہوا ہے جس نے 187 ووٹ حاصل کیے ہیں۔
جنرل اسمبلی نے 2020-21کے لیے صدر کے طور پر ترکی کے سفارت کار وولکن بوزکر کو منتخب کیا ہے۔ آرمینیا، یونان اور قبرص نے اس کی مخالفت کی تھی۔
انڈیا سلامتی کونسل کا مستقل رکن بننے کے لیے کوشش کرتا رہا ہے تاہم اسے کامیابی نہیں مل سکی، لیکن وہ غیر مستقل رکن کے طور پر 192 میں سے 184 ووٹ لے کر بلامقابلہ سلامتی کونسل کا رکن منتخب ہوا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں