Ablution

وضو اور غسل کی صفات

EjazNews

دل سے وضو کرنے کا عزم و ارادہ یعنی نیت کرنا۔ چہرے کو دھونا۔ ہاتھوں کو کہنیوں تک دھونا۔ سر کا مسح کرنا۔ پاؤں کو ٹخنوں سمیت دھونا۔ترتیب کے مطابق دھونا۔ ایک ہی وقت میں مسلسل اعضاء وضو کو دھونا۔ابتداء میں ’’بسم اﷲ‘‘ پڑھنا۔ مسواک کرنا۔کلی کرنا، ناک میں پانی ڈالنا۔ابتدائے وضو میںہاتھوں کو تین بار دھونا۔داڑھی کا خلال کرنا۔ہاتھوں اور پاؤں کی انگلیوں کا اچھی طرح خلال کرنا۔اعضاء کو تین تین بار دھونا۔ دائیں طرف سے شروع کرنا۔
وضو کی مکمل کیفیت:
پہلے نیت کریں۔ اللہ کا نام لے کر تین بار ہاتھوں کو دھوئیں۔ پھر تین بار کلی کریں اور تین بار ناک میں پانی چڑھائیں۔ پھر چہرے کو دھوئیں۔ (مکمل چہرہ داڑھی سمیت)۔ پھر سیدھے ہاتھ کو کہنی تک اور بائیں ہاتھ کو کہنی تک دھوئیں۔ سر کا مسح کریں۔ پھر کانوں کا مسح کرنا۔ پہلے دائیں پاؤں اور پھر بائیں پاؤں کو دھوئیں۔ پھر مذکورہ بالا دعائیں پڑھیں۔
وضو کو توڑنے والے اُمور:
1۔پیشاب یا پاخانے کے راستے سے کوئی بھی چیز خارج ہو جائے۔
2۔گہری نیند میں ڈوب جانا کہ مکمل بے خبری طاری ہو جائے۔ (یعنی ٹیک لگا کر سونا)۔
3۔ہاتھوں سے (بغیر لباس کے) شرمگاہ کو چھونا۔
4۔بے ہوشی طاری ہونا۔ یا کسی دواء یا نشے سے مدہوش ہو جانا۔
5۔شہوت کی حالت میں بیوی کو چھونا۔
6۔اسلام سے مرتد ہو جانا۔
7۔اونٹ کا گوشت کھانا۔
غسل کو واجب کرنے والے اُمور:
1۔جنابت اور نیند کی حالت میں یا جاگتے ہوئے منی کا شہوت کے ساتھ خارج ہونا، جماع کرنا یا مرد و زن کی شرمگاہوں کا بغیر انزال سے بھی ملنا، غسل واجب کر دیتا ہے۔
2۔حیض و نفاس کے خون کا بند ہونا۔ 3موت طاری ہونا۔4کافر کا مسلمان ہونا۔
کیفیت غسل:
غسل کی نیت کرنے کے بعد(کپڑے اتارنے سے پہلے) ’’بسم اللہ‘‘ پڑھنا۔ نجاست کو صاف کرنے کے بعد ہاتھوں کو تین بار دھونا۔ پھر وضو کرنا۔ پھر سر کو کانوں سمیت غسل دینا۔ پھر دائیں طرف سے تمام جسم پر پانی بہانا۔ پھر بائیں طرف تمام جسم پر پانی بہانا۔ آخر میں پاؤں دھونا۔
جنبی پر کیا اُمور حرام ہیں؟:
1۔نفلی یا فرضی نماز پڑھنا۔ 2قرآن مجید کو ہاتھ لگانا۔3طوافِ کعبہ کرنا۔ 4قرآن مجید کی قرأت کرنا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں