کرونا وائرس :پاک ایران سرحد وقتی طور پر بند

coronavirus-2

ایران میں ہونے والی ہلاکتوں کے بعد پوری دنیا تشویش میں مبتلا ہو چکی ہے کہ آخر یہ وائرس ایران تک کیسے پہنچا اور وہاں ہلاکتیں کیسے ہو گئیں۔ تہران سمیت کئی شہروں میں تعلیمی ادارے اور سینما گھروں کو ایک ہفتے کے لیے بند کر دیا گیاہے۔ اب تک ایران میں18افراد کے کرونا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہو چکی ہے ۔
بلوچستان کی حکومت نے پاکستان سے ایران جانے والے زائرین کے سفر پر بھی وقتی طور پر پابندی عائد کردی ہے اور صوبائی محکمہ داخلہ کو دیگر صوبوں سے اس حوالے سے رابطہ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ صوبے کے وزیراعلیٰ جام کمال نے صوبائی محکمہ آفات کو ہنگامی صورتحال کے پیش نظر پاک ایران سرحد کو پار کرنے کے مقام تفتان پر 100 بستروں پر مشتمل ٹینٹ ہسپتال قائم کرنے کا حکم دیا ہے۔تفتان کے اسسٹنٹ کمشنر نجیب اللہ قمبرانی کا کہنا تھا کہ پاکستان ہاؤس میں رہنے والے زائرین کی سکریننگ کے عمل کا آغاز کردیا گیا ہے۔
اگر چین جو اس وائر س کا مرکز ہے اس کی جانب نگاہ دوڑائی جائے تو وہا ں پر 2ہزار سے زائد ہلاکتیں ہو چکی ہیں جبکہ اس وائرس کے کیس مسلسل سامنے آرہے ہیں۔ چین کی جانب سے سامنے آنے والی رپورٹس کے مطابق اب تک وہاں پر 77ہزار لوگ اس وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ جبکہ ان میں تقریباً 11ہزار افراد کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔جبکہ چین کے علاوہ جنوبی کوریا بھی اس وائرس سے بری طرح متاثر ہوا جہاں پر 5سو سے زائد افراد کے اس وائرس میں مبتلا ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ مجموعی طور پر وہاں پر دو افراد ہلاک بھی ہو چکے ہیں اٹلی میں بھی دو افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں