چاکلیٹ بہت سے امراض سے بچائو بھی کرتی ہے

chocilate

آپ کو حیرت ہوگی کہ بعض بیماریوں میں مریض دوا کھانے کی بجائے ڈارک چاکلیٹ کھا کر ہی صحت یاب ہوگئے۔اٹلی اور امریکہ کے بعض سائنسدانوں نے اپنی تحقیق کے لئے شاید جان بوجھ کر ایسے مریضوں کا انتخاب کیا جنہیں ہائی بلڈ پریشر تھا اوران کی ذیابیطس بھی ابتدائی مرحلے میں تھی اس تجزئیے سے ثابت ہوا کہ ملک چاکلیٹ کی با نسبت ڈارک چاکلیٹ دل کے لئے بے حد مفید ہوتی ہیں اور بیماری کا توڑ ہو سکتی ہیں۔
ایک تحقیق کے مطابق یہ خیال پختہ ہو رہا ہے کہ لگا تار دو ہفتے تک روزانہ ڈارک چاکلیٹ کے دو تین ٹکڑے کھالئے جائیں تو ہائی بلڈ پریشر میں کمی واقع ہو جائے گی واضح رہے کہ یہ دونوں امراض ہائی بلڈ پریشر اور ذیابطیس ایسے عوامل ہیں جو فالج اور امراض قلب کے پیش خیمہ ثابت ہو سکتے ہیں۔
بعض ایسی غذائیں جن کا تعلق نباتات سے ہے مثلاً پھل ، سبزی، چائے اور کوکو وغیرہ یہ سب ہمارے دل کو بیماری سے بچاتی ہیں اس کی وجہ یہ ہے کہ نباتاتی غذاﺅں میں Flavanols نامی قدرتی کیمیکل کی فراوانی ہوتی ہے ۔ چاکلیٹ کا اصل جز کو کو کی پھلیا ں ہوتی ہیں جن میں Flavanols کی مقدار زیادہ ہوتی ہے۔
پانامہ کے قریب سان بلاس نامی جزائر میں کوناریڈ انڈین قبیلے کے لوگ آباد ہیں ۔ان لوگوں میں شریانوں کی بیماریاں، ذیابطیس، ہائی بلڈ پریشر اور فالج جیسے مرض انتہائی کم دیکھنے میں آتے ہیں اس کے برعکس ترقی یافتہ ملکوں میں عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ ایسے امراض کی تعداد بڑھتی ہوئی نظر آتی ہے۔ سائنس دانوں کے خیال میں ان لوگوں کی صحت کا راز کوکو کے زیادہ استعمال میں مضمر ہے۔
ڈارک چاکلیٹ خون کی نالیوں کو ذیابطیس کے نقصانات سے محفوظ رکھتی ہے اس کے علاوہ یہ آنتوں کے سرطان کی مدافعت میں بھی اہم کر دار ادا کرتی ہے۔
کوکو میں Flavanols کی موجودگی کا یہ فائدہ ہوتا ہے کہ یہ نائٹرک ایسڈ کی پیداوار بڑھا دیتے ہیں جو شریانوں کو پھیلا کر خون کے بہاﺅ میں آسانی پیدا کرتا ہے۔ ڈارک چاکلیٹ سے انسو لین کی مزاحمت میں کمی ہوتی ہے اس کا مطلب یہ ہوا کہ جسم کے خلیے انسولین کا بہتر استعمال کرسکتے ہیں اس طرح دل کے دورے کا خطرہ کم ہو جاتا ہے۔ ان تحقیق کاروں نے سفارش کی ہے کہ کھانے پینے کی چیزیں بنانے والوں کو ایسی اشیاءتیار کرنی چاہئیں جن میں کو کو اہم ترین جزو کے طور پر شامل ہوکہ دل کے امراض کا مقابلہ کرنے میں مدد مل سکے۔ یہاں یہ خیال بھی ہے کہ Flavanols جن اشیاءمیں ہوں گے دل کی بیماریوں کی روک تھام کریں گے۔ چاکلیٹ کو کو کی پھلیوں Coco Beans سے حاصل ہوتا ہے چنانچہ ان میں یہ جز و مدار میں قدرے زیادہ پایا جاتا ہے۔
ماہ دسمبر میں چاکلیٹ انڈسٹری عروج پر ہوتی ہے اور آ پ کو مختلف ذائقوں، ساخت، جسامت اور نت نئے اجزاءسے ملا کر تیار کئے جانے والے چاکلیٹ ملیں گے۔ انگریزوں اورعربوں کے علاوہ اب پاکستانیوں میں بھی چاکلیٹس کے تحائف دینے اورخود استعمال کرنے کی رسم تقویت پا چکی ہے اور یہ مغربی ملکوں کی مخصوص روایتی ثقافت اور مذہبی تہواروں کے موقع پر ہدیہ ، تہنیت کی ایک پرکشش رسم ہے۔ چنانچہ ان موقعوں پر کھانے پینے کی اشیاءفروخت کرنے والے اسٹورو ں پر چاکلیٹ بینز اور کینڈیز کی بھر مار نظر آتی ہے اور نئے سال کے آغاز پر ان کی ڈیمانڈ مزید بڑھتی ہے۔ چاکلیٹ انڈسٹری کے مسلسل فروغ میں مصروف سائنسدان اختراعات کی وجہ سے شہرت پاچکی ہیں اور بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ اول اول میکسیکو اور وسطی امریکہ میں کو کو کے درختوں کے بیج سکھا کر پاﺅڈر بنانے اور پھر اسے پانی اور دودھ میں شامل کرنے کے تاریخی شواہد ملتے ہیں۔ کولمبس کہیں پندرہویں صدی میں یورپ لوٹتے وقت ان کو کو کی پھلیوں کواپنے ہمراہ یورپ لے آیا تھا۔ یہاں آکر اسے خیا ل آیا کہ ان پھلیوں کو پیس کر شکر اور پانی ملا کر میٹھے مشروب کے طور پر استعما ل کرے۔
یہ اب بھی اسی ترکیب سے بنتا ہے جس طرح اٹھارویں صدی میں بنتا تھا۔ صنعتی یونٹ ان پھلیوں کو خشک کر کے 250ڈگری فارن ہیٹ پر اسے پکاتے ہیں پکنے یعنی روسٹ ہونے کے بعد چاکلیٹ کے شربت، کوکو بٹر اور شکر کے ساتھ ملا کر اس کی ساخت ترتیب دی جاتی ہے۔ دودھ کے چاکلیٹ میں خشک دودھ بغیر کسی اضافی شربت کے شامل کیا جاتا ہے۔ عام خیال یہ ہے کہ یہ شربت حلال نہیں۔اس لئے مسلمان ملکوں میں یہ چاکلیٹ فروخت نہیں کئے جاتے جبکہ چاکلیٹ کے صنعت کاروں کا کہنا ہے کہ ہم بین الاقوامی تجارت کوفروغ دینے کے لئے ممکنہ حد تک اخلاقی ضابطوں کی پیروی کرتے ہیں اور الکوحل شامل نہیں کرتے۔
ہر موسم ہر سا ل ہر ماہ ان ذائقوں کے مختلف تجربات ہوتے رہتے ہیں پھلوں کے مختلف ٹکڑوں ، ذائقوں کے ساتھ ونیلا، کافی اور Soy Lecithin کے اجزا شامل کئے جاتے ہیں۔ خشک میوہ جات کے ساتھ ساتھ ان کے تیلوں کو بھی تجربے میں شامل کیا گیا ہے۔ کو کو بٹر ایسی چکنائی ہے جس کی وجہ سے چاکلیٹ پگھلتا ہے اور ذائقہ دیتا ہے۔
جس طرح پلاسٹک کی اشیاءبنانے والی کمپنیاں ڈائیوں کی مدد سے مختلف ساخت پر مشتمل برتن بناتی ہیں اس طرح چاکلیٹ انڈسٹری میں بھی ہمہ قسم کے بار اورسانچے استعمال کئے جاتے ہیں۔ ماڈرن چاکلیٹ بار میں بادام، پستے ، کاجو، کھجور ، پھلوں کے ایسٹر، مونگ پھلی کا مکھن وغیرہ یعنی بہت کچھ شامل کیا جاتا ہے۔
کوکو بنیادی جز ہے جس کی مدد سے چاکلیٹ تیار ہوتا ہے اور یہ مختلف مقامات پر کاشت ہونے والی پھلیوں کی وجہ سے معیار میں قدرے مختلف ہو سکتی ہیں یعنی نباتاتی سطح پر کچھ پھلوں سے پھلوں، پھولوں اور اجناس کی خوشبو قدرتی طور پر آتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں