سابق امیر جماعت اسلامی سید منور حسن دنیا فانی کو چھوڑ گئے

syed munawar hassan
EjazNews

سید منور حسن 1941ءمیں دہلی میں پیدا ہوئے ۔ انہوں نے جامعہ کراچی سے سوشیالوجی میں ایم اے کیا۔ جبکہ ایم اے اسلامیات بعد میں انہوں نے کیا ۔ وہ زمانہ طالب علمی میں اپنے کالج کے میگزین کے ایڈیٹر کے طور پر بھی خدمات انجام دیتے رہے ۔79سالہ منور حسن 2008ء سے 2013ءتک جماعت اسلامی کے امیر رہے۔اس سے قبل 1993 سے لے کر 2008ء تک وہ جماعت اسلامی کے سیکرٹری جنرل کے طور پر خدمات انجام دیتے رہے۔مرحوم منور حسن جماعت اسلامی کےان کارکنوں میں شامل تھے جنہوں نے زمانہ طالب علمی سے ہی جماعت اسلامی کے ساتھ وابستگی اختیار کر لی تھی۔ وہ 1966سے لے کر 1968 تک اسلامی جمعیت طلبہ کے ناظم رہے تھے۔
جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن طویل علالت کے بعد کراچی کے مقامی ہسپتال میں اس دنیا فانی سے کوچ کر گئے۔کراچی میں ان کی طبیعت چند دنوں پہلے زیادہ بگڑ ی وہ کراچی کے امام کلینگ میں زیر علاج تھے۔ جس کے باعث انہیں وینٹی لیٹرپر منتقل کیا گیا ۔
سید منور حسن جماعت اسلامی کے چوتھے امیر رہے ہیں ۔

جماعت اسلامی کے سابق امیر اور قابل قدر انسان سید منور حسن ان لیڈران میں شامل تھے جنہوں نے 1977ء میں قومی اسمبلی ک االیکشن لڑا اور پاکستان بھر میں سب سے زیادہ ووٹ لینے والے رہنما بنے۔ سابق امیر جماعت اسلامی سید منور حسن ان رہنمائوں میں شامل تھے جو پورے پاکستان میں بغیر کسی تنازع کے عزت کی نگاہ سے دیکھے جاتے تھے۔ اتنے بڑے منصب پر فائز رہنے کے باوجود کبھی ان کی زندگی میں بھی اور ان کے اس دنیا سے جانے کے بعد بھی کوئی ان پر انگلی اٹھا کر بات نہیں کر سکتے۔ پاکستان کی عوام ایک مخلص پر خلوص رہما سے محروم ہو گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں