جنگی روبوٹس کو انسانوں کی ذہانت ٹرانسفر کرنے کیلئے انوکھا منصوبہ

video-game-players
EjazNews

امریکی کوئی ایسی چیز نہیں چھوڑ رہے جس پر وہ اپنی تحقیق کا دائرہ کار وسیع نہ کر رہے ہوں ۔وہ ہر اس چیز جس پر تحقیق انسان کر سکتا ہے کر رہے ہیں۔ امریکی دفاعی تحقیقی ادارے ’’ڈاریا‘‘ نے ویڈیو گیم کھیلنے والوں کی دماغی لہروں سے جنگجو روبوٹس کو تربیت دینے کے ایک منفرد منصوبے پر کام شروع کروایا ہے۔ جس کے لیے یونیورسٹی آف بفیلو، نیو یارک میں کمپیوٹر اور مصنوعی ذہانت کے ماہرین کوفنڈز بھی جاری کر دئیے گئے ہیں ۔
اس منصوبے کے تحت کمپیوٹر گیمز کے 25کھلاڑی بھرتی کیے جائیں گے ۔ گیم کھیلنے کے دوران کھلاڑیوں کی دماغی سرگرمیاں نوٹ کرنے کے لیے ان کے سروں پر خاص طرح کی ٹوپیاں پہنائی جائیں گی جو دماغی سینسروں سے لیس ہوں گی۔ کھیل کے دوران کھلاڑیوں کے دماغوں میں ہونے والی سرگرمیاں ریکارڈ کرنے کے بعد انہیں مصنوعی ذہانت پر مشتمل ایسے پروگرام تیار کرنے میں استعمال کیا جائے گا جن کی مددسے مستقبل کے فوجی روبوٹس نہ صرف خود کوبچا سکیں گے بلکہ ایسے متعدد روبوٹس آپس میں رابطہ رکھتے ہوئے منظم انداز میں کوئی مشترکہ فوجی کارروائی بھی انجا م دے سکیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں