جنوری 2020ءمیں یوٹیلٹی سٹورز کو6ارب کی سبسڈی ملے گی،سستی اشیاء مہیا کرنے کیلئے:ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان

Dr-Firdos-ashiq-aiwan

کابینہ اجلاس کے بعد وزیراعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے میڈیا بریفنگ میں کہا کہ کابینہ اجلاس میں 9 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا اور ملک کی مجموعی سیاسی اور معاشی صورت حال کا جائزہ لیا گیا۔وزیراعظم عمران خان اور کابینہ نے 5 ماہ سے معصوم اور نہتے کشمیریوں کے ساتھ دہشت گردی کی شکل میں جاری بھارتی حکومت کے ریاستی جبر کی مذمت کی اور ایک متفقہ قرارداد منظور کی۔
انہوں نے بتایا کہ کابینہ نے نریندر مودی کی حکومت کا اقلیتوں اور خصوصاً مسلمانوں کیخلاف قانونی سازی کے ذریعے استحصال کی مذمت کی ۔اس کے ساتھ ہی مودی کے آر ایس ایس اور ہندو توا نظریات کے تحت اقلیتوں سے ناروا سلوک کی مذمت کی۔
انہوں نے بتایاکہ وزیراعظم عمران خان جنوری کے پہلے ہفتے میں یوٹیلٹی کارپوریشن کے ذریعے بنیادی اشیا خورد ونوش پر 6 ارب کی سبسڈی کا پروگرام شروع کرنے جارہے ہیں۔جنوری کے آخری ہفتے میں وزیراعظم پسے ہوئے، نادار ارو غریب طبقے کی بنیادی ضروریات پوری کرنے جارہے ہیں اور اس کے لیے فنانشل اسسٹنس کارڈ کا اجرا کیا جارہا ہے۔سروے کے مطابق ایک نظام کے ذریعے ہم طبقے کی مالی تعاون کریں اور دوسری طرف صحت کارڈ کے ذریعے صحت کی ضروریات پوری کی جائیں گی۔
ان کا کہنا تھا کہ اس ڈیٹا سسٹم جو رجسٹر نہیں ہیں لیکن مزدوری نہ حاصل کرپانے والے افراد کو اپنے گھر کے افراد کو تعاون کے لیے لنگر کے ذریعے مدد کی جائے، فٹ پاتھ اور دیگر کھلی جگہوں پر سونے والے مزدوروں کے لیے عارضی رہائش کے طور پر پناگاہوں کے ذریعے مدد کی جائے گی اور وزیراعظم کا احساس پروگرام کے تحت ہر شہر میں پناگاہیں بنانے پر بھی کابینہ نے زور دیا۔
معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ کابینہ کے اجلاس سے قبل ان کیمرا بریفنگ ہوئی جس میں نیب آرڈیننس، نیب قوانین اور اس کے ساتھ جڑے بہتری کے روڈ میپ پر تفصیل سے بحث بھی ہوئی اراکین نے اپنا نکتہ نظر بھی کابینہ کے سامنے پیش کیا۔وزیراعظم نے نیب آرڈیننس کے ذریعے کاروبری برادری کے راستے کے کانٹے چننے کی کوشش کی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ نیب آرڈیننس کا معاملہ پارلیمنٹ میں زیر بحث آئے گا اور اپوزیشن کی تجاویز کا خیر مقدم کریں گے۔
ایجنڈے کے پہلے نکتے میں کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے 23 دسمبر کے فیصلوں کی توثیق کی اور دوسرے نمبر میں نیپرا ایکٹ میں ترامیم کی سفارش پر جو سقم تھے ان کو دور کرنے کے لیے ای سی سی کے پاس بھیج دیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کابینہ نے نیشنل کالج آف آرٹس کو انسٹی ٹیوٹ میں تبدیل کرنے کے مجوزی بل کی منظوری دی اور چاروں صوبوں میں اس کے کیمپس کھو لے جائیں گے تاکہ پاکستان کے اندر فن اور فن کار کو دور جدید کے تقاضوں کے مطابق ہم آہنگ کیا جائے۔اسٹیٹ بینک کی 2008 کی مالی اسسمنٹ رپورٹ کی اشاعت کی منظوری دی گوکہ یہ ویب سائٹ میں موجود ہے لیکن اشاعت کے لیے کابینہ کی منظوری درکار تھی جو دی گئی۔ ایجنڈے کا پانچواں نکتہ ناروے کے شہری محمد اویس کے حوالے سے تھا جو وہاں ریپ اور گھریلو تشدد کے سنگین الزامات کے بعد پاکستان واپس آیا تھا تاہم کابینہ نے منظوری دی کہ ایڈیشنل کمشنر کے ذریعے معاملے کی انکوائری کروائی جائے جس کے لیے وزارت داخلہ کو متعلقہ ملک نے درخواست کی تھی۔ساتویں نکتے پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ محمد ہاشم رضا کو چیف ایگزیکٹو آف اسمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز تعینات کرنے کی منظوری دے دی۔ آٹھواں نکتہ حکومت کے ایک سال کے اقتصادی اشاریوں پر بریفنگ تھی جس میں بتایا گیا کہ ایک سال میں حکومت نے کیا کھویا اور پایا، ملک کو کہاں چیلنج کا سامنا تھا جس کو ہم نے دور کیا۔
وفاقی کابینہ کے آخری نکتے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ شاہد سلیم خان کو منیجنگ ڈائریکٹر، چیف ایگزیکٹو افسر، آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (او جی ڈی سی ایل) تعینات کرنے کی منظوری دی گئی۔
سوشل میڈیا میں وفاقی اور صوبائی وزرا کی مبینہ ویڈیوز کی گردش کے حوالے سے ایک سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ٹیکنالوجی جہاں زندگی کو آسان بناتی ہے وہی زندگی کو جہنم بھی بنادیتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں