بغیر ایڑھی کے جوتے خوبصورتی کے ساتھ صحت کیلئے بھی بہتر ہیں

pumps_shoes

آپ کبھی اس بات پر غور کیجئے جب آپ اونچی ایڑھی کے سینڈلز پہنتی ہیں تو پیر کچھ ہی دیر بعد کیوں درد کرنے لگتے ہیں؟ اور سینڈلز اتارتے ہی سکون کیوں ملتا ہے ؟ کیونکہ اونچی ایڑھی کے جوتے میں جسم کا سارا وزن پائوں کے آگے والے حصے یعنی پنجے کی طرف جاتا ہے ۔آپ کا دھیان صرف خود کو متوازن رکھنے میں رہتا ہے، اس طرح جسم کی کشش ثقل ختم ہو جاتی اور کمر درد جیسے مسائل سامنے آتے ہیں۔ بغیر ہیل یا نیگیٹو ہیل شوز کو اس طرح ڈیزائن کیا گیا ہے کہ یہ پیروں کی قدرتی بناوٹ کو بحال رکھتے ہیں اور جسم کے باقی حصوں کی طرح ایڑھی اور پنجوں پر یکساں وزن ڈالتے ہیں۔ کمر کے درد کی شکایت بھی دور ہوتی ہے تھکان نہیں ہوتی اور دماغ بھی پر سکون رہتا ہے۔ انہیں پہن کر چال متوازن ہو جاتی ہے اور جسم میں پھرتی سی آجاتی ہے۔
امراض قلب، ذیابیطس، آرتھرائٹس وغیرہ میں مبتلا خواتین کو pompsجیسے سادہ جوتے استعمال کرنے چاہئیں۔
ماہرین کے ایک تجزئیے کے مطابق جن ممالک میں خواتین اونچی ایڑھی کے جوتے استعمال کرتی ہیں وہاں خواتین جوڑوں کے درد اور موٹاپے کا زیادہ شکار ہوتی ہیں۔ بغیر ایڑھی کے جوتوں کے انتخاب کی ایک خاص وجہ یہ ہے کہ انہیں پہن کر چلنے سے جسم کے زائد حرارے جلتے ہیں ۔ اس قسم کے جوتوں کو پہن کر چلنے سے جسم کے تمام پٹھوں پر متوازی وزن پڑتا ہے اور پنڈلیوں کے پٹھے اضافی بوجھ سہارنے سے بچ جاتے ہیں۔ popm یا نیگیٹو ہیل شوز پہن کر چلنے کے لئے جسم اضافی طاقت لگاتا ہے جس کے نتیجے میں حرارے جلتے ہیں۔ جسم کے میٹا بولزم کو فعال رکھنے کے لئے یہ بہترین طریقہ ہے۔
جب آپ پہلی بار ایسے جوتے پہنتی ہیں تو چلنے پھرنے کے عمل میں خاصی تبدیلی محسوس ہوتی ہے۔جسم کے وہ پٹھے جو عرصہ دراز سے استعمال نہیں ہوئے تھے وہ بھی حرکت میں آجاتے ہیں اور ٹانگوں میں اینٹھن ہو سکتی ہے مگر یہ صرف وقتی ہوگا ان کے استعمال سے بتدریج پیروں کو سکون ملے گا۔ بغیر ایڑھی کے جوتے روز مرہ استعمال ہونے والے جوتوں کی طرح استعمال کریں ،اس طرح آپ کو ان کی عادت ہو جائے گی۔ دوپہر اور صبح کے اوقات میں خاصر کر پہنیں۔ ٹانگوں کی کسی بیماری میں مبتلا ہونے کی صورت میں جوتے کا انتخاب زندگی سہل کر سکتا ہے۔ ہر طرح کے پہناوئوں پر جچنے والے یہ آرام دہ جوتے آپ کی بھی اولین پسند ہو سکتے ہیں ذرا ایک بار انہیں استعمال کر کے تو دیکھئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں