اسرائیل میں چین کے سفیر کی پراسرار موت

chines_embasder
EjazNews

ڈووی چین سے بطور سفیر اسرائیل گئے تھے۔ وہ شادی شدہ تھے اور ان کا ایک بیٹا بھی ہے لیکن ڈو وی کی اہلیہ اور بیٹا اسرائیل میں ان کے ہمراہ موجود نہیں تھے۔ وہ رواں برس فروری میں اسرائیل میں بطور سفیر تعینات ہوئے تھے۔58سالہ ڈوڈی کی اچانک اسرائیل میں موت ہو گئی۔ اب موت کی وہ کیا بنی اس کا ابھی تک کسی کو کچھ معلوم نہیں۔ لیکن حیرت انگیز طور پر اس خبر کو پوری دنیا کے میڈیا میں جگہ ملی۔
چینی سفارت خانے کی ویب سائٹ پر جاری ایک رپورٹ کے مطابق اسرائیلی پولیس کے ترجمان نے چینی سفیر کی موت کی وجہ نہیں بتائی ۔
الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق سرائیلی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل یووال روٹیم نے کہا کہ انہوں نے چین کے ڈپٹی سفارت کار سے ڈو وی کی موت کی تعزیت کی اور اس حوالے سے چینی سفارت خانے کو ہر قسم کی مدد کی پیشکش بھی کی۔
بی بی سی پر جاری رپورٹ کے مطابق اسرائیل کے چینل 12 ٹی وی نے نامعلوم طبی ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ابتدائی معلومات کے مطابق ڈو وی کی موت حالت نیند میں طبی وجوہات کے باعث ہوئی۔ ڈو وی کی تعیناتی کے بعد اسرائیل میں واقع چینی سفارت خانے کی ویب سائٹ پر ان کا ایک بیان درج ہے جس میں انہوں نے عہدہ سنبھالنے کے بعد چین اور اسرائیل کے مابین تعلقات کی تعریف کی تھی۔ کرونا وائرس کی پابندیوں کے باعث 15 فروری کو اسرائیل پہنچنے کے بعد چینی سفیر فوری طور پر 2 ہفتے کے لیے خود ساختہ آئیسولیشن میں چلے گئے تھے۔
دوسری جانب ہاریٹز ڈیلی کے مطابق ڈو وی اپنے بستر پر مردہ حالت میں پائے گئے تھے اور ان کی لاش پر تشدد کے نشانات نہیں تھے۔
اسرائیل میں تعیناتی سے پہلے ڈووی یوکرائن میں بطور سفیر خدمات انجام دے چکے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں